Nazir Qaiser reads his own poetry - Fursat-e-Khaab Khaab se kam hai




نذیر قیصر بزبان خود "فرصت خواب خواب سے کم ہے فرصت خواب خواب سے کم ہے پیاس ہے اور شراب سے کم ہے ...